متفرق

گاجر

گاجرگاجر ، دنیا کے تمام ممالک میں بہت ہی پسندیدہ سبزی تصور ہوتی ہے اور یہ بہت ہی مقوی غذا ہے۔ اس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ گاجر کا استعمال بینائی تیز کرنے کی صلاحیت ہی نہیں رکھتا بلکہ اس کے کئی دیگرطبی فوائد بھی ہیں۔گاجر کے جوس کا باقائدہ استعمال ناخن ،بال ، دانت اور ہڈیوں کے لئے انتہائی مفید ہے۔طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ گاجر میں وٹامن اے ، بی اور ای سمیت کئی ایسے قدرتی اجزا پائے جاتے ہیں جو انسانی صحت کے لئے انتہائی اہم ہیں۔ ماہرین کے مطابق روزانہ گاجر کا جوس پینے سے نہ صرف جگر کا نظام فعال ہوتا ہے بلکہ یہ کینسر کی رسولیوں کی افزائش روکنے میں بھی ایک اہم کردار ادا کرتا ہے۔گاجر کے سبز پتوں میں بھی پروٹین ، معدنیات اور وٹامنز وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں جو صحت کے لیے بہت ہی مفید ہوتے ہیں۔ گاجر کو دو طرح کی اقسام میں تقسیم کیا گیا ہے۔ ایک ایشیائی گاجر ہوتی ہے جو لمبی ، گہرے رنگ والی اور میٹھی ہوتی ہے جبکہ دوسری یورپی گاجر ملائم جلد والی اور کم ریشے کے ساتھ بہتر جسامت کی حامل تصور کی جاتی ہے۔ گاجر وٹامن اے کا بہت ہی اچھا ذریعہ ہے۔ گاجر میں وافر مقدار میں سوڈیم ،سلفر،کلورین ، اور کچھ مقدار میں آیوڈین ہوتی ہے۔ گاجر کو استعمال کرتے ہوئے اس بات کا خیال رکھیں کہ گاجر کو چھیلنے سے اس کے معدنی اجزاء کے ضائع ہو جانے کا اندیشہ ہوتا ہے اس لیے گاجر کو بغیر چھیلے ہی استعمال کرنا چاہیے۔
طبی ماہرین کے مطابق گاجر کے مندرجہ ذیل فوائد ہیں۔
گاجر میں پائی جانے والے کھاری اجزاء انسانی جسم میں خون کو صاف رکھتے ہیں۔
یہ بدن کی نشوونما کرنے کے ساتھ ساتھ جسم میں ضرورت کے مطابق تیزابیت پیدا کرتی ہے۔
گاجر کے جوس کو ” کرشماتی مشروب ” کہا جاتا ہے جو بچوں اور بڑوں کے لیے یکساں مفید ہے۔
گاجر کا جوس آنکھوں کو توانا کرتا ہے۔
انسانی جلد کو تروتازہ رکھنے میں گاجر بہت ہی معاون ثابت ہوئی ہے۔
کھانے کے بعد گاجر کو چبا کر کھانے سے منہ میں پا ئی جانے والے جراثیم ہلاک ہو جاتے ہیں۔ مسوڑھوں سے خون بند ہو جاتا ہے اور دانتوں کا انحطاط رک جاتا ہے۔
گاجر ہاضمہ کی خرابیوں کو دور کرنے میں معاون ثابت ہوتی ہے
معدے کے السر کو گاجر کا استعمال روکتا ہے اور ہاضمہ کی دیگر بیماریوں سے نجات دیتا ہے۔
چھوٹی اور بڑی آنت کی بہت سی بیماریوں میں مو¿ثر ہے۔
گاجر اور پالک کا جوس ملا کر پینے سے قبض رفع ہو جاتی ہے اور انتڑیاں صاف ہو جاتی ہیں۔
دوران اسہال گاجر کا جوس پانی اور نمکیات کی کمی کو پورا کرتا ہے۔
پیٹ کے کیڑوں کے لیے بھی گاجر کا جوس بےحد مفید ہے۔
گاجر کو مختلف طریقوں سے استعمال کیا جا سکتا ہے مثلا ابال کر ، سلاد کے طور پر ، پکا کر یا جوس بنا کر۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s