مہاجرین کا عالمی دن


منصور مہدی
کل مہاجرین کا عالمی دن منایاگیا۔ یہ دن اقوام متحدہ کے زیر اہتمام ہرسال20جون کو منایا جاتا ہے۔ اس دن کو منانے کی ابتدا 2000میں ہوئی۔اس دن کے منانے کا مقصد مہاجرین یا پناہ گزین جو جنگ ،نسلی تعصب،مذہبی کشیدگی ،سیاسی تناﺅ یا امتیازی سلوک کی وجہ سے اپنا گھر بار چھوڑ کر دوسری جگہ نقل مکانی کرجاتے ہیں کے ساتھ اظہار یکجہتی اوران کو درپیش مسائل کے حوالے سے آگاہی پیدا کرنا ہے۔پاکستان اپنی تخلیق کے پہلے دن سے آجتک مہاجرین کی پناہ گاہ بنا ہوا ہے۔ 1947ءمیں لاکھوں مسلمان ہجرت کر کے پاکستان منتقل ہوئے پھر 1971کے بعد بنگلہ دیش بن جانے کے بعد بہاریوں کے قافلے پاکستان آنے شروع ہوئے پھر 1979 میں افغانستان پر سوویت یونین کے حملے اور بعد میں ہونے والی خانہ جنگی اور اب امریکی حملے کے بعد سے اب تک لاکھوں افغان مہاجرین پاکستان آئے۔
جبکہ بیشتر پاکستانی بھی پاکستان میں مہاجرین کی سی زندگی گزار رہے ہیں۔ حالیہ برسوں میں جنوبی وزیرستان اور سوات میں پاک فوج کے دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کے سبب لاکھوں افراد نے ملک کے مختلف شہروں کی طرف ہجرت کی۔جولائی 2010ء میں اندرون ملک تباہ کن سیلاب کے سبب 2 کروڑ 10لاکھ افراد متاثر ہوئے جنہیں اپنے گھر بار چھوڑ کر محفوظ مقامات پر پناہ لینی پڑی۔
پاکستان میں سب سے بڑی تعداد افغان پناہ گزینوں کی ہے جن کی تعداد 30لاکھ سے بھی زیادہ ہے ۔جو دنیا کے کسی بھی دیگر خطے کے مقابلے میں سب سے زیادہ ہے۔
اقوام متحدہ کے ادارے برائے مہاجرین ( یو این ایچ سی آر) نے ایک رپورٹ میں بتایا کہ جہاں ایک طرف دنیا میں اسی فیصد مہاجرین کا بوجھ ترقی پذیر اور غریب ممالک برداشت کر رہے ہیں تو دوسری جانب کئی ترقی یافتہ ممالک مہاجرین کے بارے میں ذمہ داریاں پوری کرنے سے پہلو تہی کر رہے ہیں اور وہاں مہاجرین کے مخالف جذبات کو فروغ مل رہا ہے۔رپورٹ کے مطابق اس وقت دنیا بھر میں 43.7 ملین لوگ تارکین وطن کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیںجبکہمزید 27.5 ملین افراد اپنے ہی ممالک میں بے سروسامانی کی زندگی گزار رہے ہیں۔چند سالوں سے افریقہ اور عرب ممالک میں ہونے والی کشیدگی اور خانہ جنگی کی وجہ سے تارکین وطن کی تعداد میں از حد اضافہ ہو رہا ہے۔اس دن کی مناسبت سے دنیا بھر کی تمام حکومتوں اور عوام کو یہ پیغام دینا ہے کہ تارکین وطن بھی اپنا وطن رکھتے ہیں اور ان سے ایسا برتاﺅ کیا جانا چاہیے کہ انھیں بے وطن ہونے کا احساس نہ ہو۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s