ملاحوں کا عالمی دن


منصور مہدی
آج ملاحوں کا عالمی دن ہے۔ اس دن کا آغاز گذشتہ برس 2011میں کیا گیا۔جس کا مقصد ان ہزاروں ملاحوں ، جہاز رانوں اور بحری جہازوں پر ملازمت کرنے والوں کی حوصلہ افزائی کرنا ہے جو دنیا کے ممالک میں سامان ضروریات کی ترسیل کے لیے اپنے گھروں سے ہزارون میل دور پانیوں میں اپنا وقت گزارتے ہیں۔اور اس کام کی ادائیگی میں بیشتر اپنی جانوں سے بھی ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔ برطانوی برٹش میرین نامی ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت دنیا میں 12ملین سے زائد افراد تجارتی جہازوں اور کشتیوں پر ملازمت کرتے ہیں۔ سمندروں میں سفر کے دوران قدرتی آفتوں کے علاوہ قزاقی کی وارداتوں کے دوران ان میں سے کئی افرادزخمی اور ہلاک ہو جاتے ہیں۔برطانوی ادارے کا کہنا ہے کہ اگرچہ ترقی یافتہ ممالک میں ان سب ملازموں کی انشورنس کی جاتی ہے اور دوران ملازمت ان کے مرنے کے بعد ان کے خاندان کی خبر گیری بھی رکھی جاتی ہے مگر ایسے ممالک کی ابھی بھی اکثریت ہے کہ جہاں پر ان ملازموں کے ساتھ انتہائی ناروا سلوک کیا جاتا ہے۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ سمندروں کے یہ ساتھی دنیا بھر کے ممالک کی عوام کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ایک سمندر سے دوسرے سمندر اور ایک ملک سے دوسرے ملک میں اپنی زندگیاں صرف کرتے ہیں۔ لہذا حکومتوں کا فرض ہے کہ ان کی فلاح و بہبود اور دوران ملازمت مرنے والوں کے خاندان کے لیے فنڈز قائم کیے جائیں۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s