ایچ آئی وی ویکسین


منصور مہدی
آج ایچ آئی وی ویکسین سے آگاہی کا عالمی دن ہے۔یہ دن 18مئی 1997سے منایاجارہا ہے۔ اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت دنیا میں ایچ آئی وی وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 3 کروڑ 40 لاکھ ہے۔جبکہ نیشنل ایڈز کنٹرول پروگرام کے مطابق پاکستان میں ایک لاکھ سے زائد افراد ایچ آئی وی کا شکار ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق اس مہلک مرض کی روک تھام کے سلسلے میں دنیا نے گزشتہ سال نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں لیکن عالمی سطح پر اس مرض کے خاتمے کے لیے ابھی بہت کچھ کیا جانا ضروری ہے۔ڈاکٹروں کے مطابق ایچ آئی وی کا وائرس غیر محفوظ جنسی ملاپ، انجکشن کے ذریعے نشہ آور ادویات کے استعمال اور دیگر ذرائع سے پھیلتا ہے۔ یہ وائرس انسانی جسم میں داخل ہونے کے بعد قوت مدافعت پر حملہ آور ہوتا ہے جس کے بعد متاثرہ شخص میں مختلف بیماریوں سے لڑنے کی صلاحیت ختم ہو کر رہ جاتی ہے اور یوں وہ آہستہ آہستہ موت کی طرف بڑھنا شروع کر دیتا ہے۔ ایڈز کی بیماری ایک لاعلاج مرض ہے اس کی ابھی تک کوئی مناسب دوائی تیار نہ کی جا سکی ہے لیکن ایک نئی تحقیق کے مطابق تجرباتی ایچ آئی وی ویکسین کی مدد سے پہلی بار انفکیشن کے خطرے کو کم کرنے میں کامیابی حاصل ہوچکی ہے۔یہ ویکسین پہلے سے تیار کی گئی تجرباتی ویکسینز کو ملا کر تیار کی گئی جسے تھائی لینڈ میں سولہ ہزار افراد کو دیا گیا۔ ویکسین ٹرائل کا یہ اب تک کا سب سے بڑا تجربہ ہے۔تحقیق میں پایا گیا ہے کہ اس ویکسین نے ایڈز جیسی بیماری کو پھیلانے والے ایچ آئی وی وائرس کے انفکشن کے خطرے کو ایک تہائی تک کم کر دیا۔اس تجربے کو اس سمت میں اب تک کی ایک بڑی کامیابی مانا جا رہا ہے لیکن ابھی بھی ایک عالمی ویکسن تیار کرنے میں کافی وقت لگ سکتا ہے۔اس تحقیق کی عالمی صحت کے ادارے ڈبلیو ایچ او اور اقوام متحد کی جانب سے تعریف کی گئی ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s