ثقافتی تنوع کا عالمی دن


منصور مہدی
آج ثقافتی تنوع کا عالمی دن ہے۔یہ دن گذشتہ دس برسوں سے ہر سال 21مئی کو منایا جاتا ہے۔ 2002میں اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو نے اس دن کو منانے کا آغاز کیا۔ اس دن کو منائے جانے کا بنیادی مقصد دنیا بھر میں آباد قوموں کی مختلف ثقافتوں اور مذاہب کے مابین روابط اور مکالمے کو فروغ دینا ہے۔ اس دن کے موقع پراقوام متحدہ کے رکن ممالک میں مختلف سیاسی، سماجی اور ثقافتی تنظیموں کے مابین پروگرام منعقد کئے جاتے ہیں۔ جن میں مختلف ثقافتوں، عقائد اور نظریات سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے مابین مکالمے کی ضرورت پرز ور دیا جاتا ہے ۔
سماجی علوم میں کہا گیا ہے کہ ثقافت یعنی علم و ادب، آداب ہر قوم کے درمیان رائج ایسے امورہیںکہ جن پر اس قوم کے لوگ عمل کرنے کے پابند ہوں۔ یا یہ کہ علوم، فنون، افکار، عقائد، اخلاقیات، قوانین اور آداب و رسوم پر مشتمل مجموعہ کا نام ثقافت کہلاتا ہے۔ اس طرح دنیا میں ہر نسل اور ہر مذہب کے لوگ آباد ہیں۔ جن کے نسلی اور مذہبی روایات اور طور طریقے ہیں لیکن ایک ہی دنیا میں رہنے کی وجہ سے متعدد رسمیں اور ثقافت میں یکانگی پائی جاتی ہیں چنانچہدنیا میں بسنے والوں میں اتحاد قائم رکھنے کے لیے ثقافت کو اتحاد کی علامت قرار دیا جاتا ہے۔ ثقافت کسی بھی معاشرے کے پیکر میں روح اور جان کا درجہ رکھتی ہے۔ لہذا موجودہ بد امنی اور فساد کے دور میں مختلف قوموں کے درمیان ہم آہنگی کی بہت ضرورت ہے چنانچہ ثقافت ہی وہ بنیادی زینہ ہو سکتا ہے کہ جسے بنیاد بنا کر امن کی منزل تک پہنچا جا سکتا ہے اور مختلف اقوام اور مذاہب کے درمیان مکالمے کو شروع کیا جاسکتا ہے۔ لہذا مختلف ثقافتوں، عقائد اور نظریات سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے مابین مکالمے کی بہت زیادہ ضرورت ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s