خاندان کا عالمی دن


منصور مہدی
آج خاندان کا عالمی دن ہے۔ پہلی مرتبہ 1994 کو اقوام متحدہ نے خاندان کا عالمی سال قرار دیاتھا جس کے بعد یہ دن ہر سال 15مئی کو اقوام متحدہ کے رکن ممالک میں منایا جاتا ہے۔اس دن کا مقصد عالمی سطح پر مختلف معاشروں میں قائم خاندانی نظام کو نا صرف مضبوط بنانے کیلئے شعور اجاگر کرنا ہے بلکہ ان خاندانی نظام میں موجودہ خرابیوں کا دور کرکے وہاں کے شہریوں کی اصلاح کرنا ہے۔
خاندانی ٹوٹ پھوٹ کے حوالے سے امریکہ اور سوئیڈن کا دنیا میںپہلے نمبر پر شمار ہوتا ہے۔ ان دونوں ممالک میں70 فیصد کے قریب خاندان ٹوٹ چکے ہیں۔اس کے برعکسآج کے دور میں جب اکثر مسلمان نام کے مسلمان رہ گئے ہیں اور اسلامی تعلیمات پر عمل نہ ہونے کے برابر ہے اس کے باوجود مسلمانوں کا خاندانی نظام ابھی بھی قابل رشک ہے۔
مغربی معاشرے میں مذہب سے دوری اور جدت نے جہاں روز مرہ زندگی میں کئی آسانیاں پیدا کی ہیں وہیں خاندانی نظام بری طرح متاثر ہوا ہے اس کا اندازہ اس امر سے لگایا جاسکتاہے کہ دنیاکے انتہائی جدید ترین ممالک کے خاندان ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، جدید معاشروں میں طلاق کی شرح میں تیزی سے اضافہ جاری ہے ۔ ان ممالک میں خاندان کا سربراہ اپنے خاندان کو بچانے میں ناکام ہوچکا ہے۔یوپی یونین کے ممالک میں اوسطً 50فیصد خاندان مختلف گھریلو اختلافات اور تنازعات کے باعث ٹوٹ چکے ہیں۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s