حلال احمر کا دن


منصور مہدی
آج حلال احمر کا عالمی دن ہے۔ اس دن کے منانے کا بنیادی مقصد زمانہ امن، حالت جنگ، قدرتی آفات، ناگہانی سانحات اور بڑے حادثات کی صورت میں ہلال احمر کے کردار، اس کی ضرورت، اہمیت، افادیت، اقدامات پر تفصیلی روشنی ڈالنا ہے۔ یہ دن ہر سال 8مئی کو اقوام متحدہ کے زیر اہتمام منایا جاتا ہے۔ اس دن کی ابتدا 1967 سے شروع ہوئی ۔ یہ دن ریڈ کراس کے بانی اور پہلے نوبل انعام یافتہ ہینری ڈوننٹ کے یوم پیدائش کے حوالے سے چنا گیا۔اس سال ریڈ کراس کے عالمی دن کا موضوع “انسانیت کیلئے اکٹھے ہونا ” (ٹوگیدر فار ہیومینٹی ) ہے۔ ریڈ کراس سوسائٹی کے مطابق دنیا بھر کے 170ممالک میں اس کے رضا کار ممبران کی تعداد 97ملین سے بھی زائد ہے جس میں ہر سال لاکھوں کا مزید اضافہ ہو رہا ہے۔ ریڈ کراس سوسائٹی 1870 میں قائم ہوئی تھی۔
برصغیر میں اس سوسائٹی کی داغ بیل پہلی جنگ عظیم کے دوران 1920میں پڑی۔ قیام پاکستان کے بعد یہ ادارہ بھی تقسیم ہوگیا۔ 6 مارچ 1974کو پاکستان میں اس ادارے کا نام بدل کر ہلال احمر رکھ دیا گیا۔ کیونکہ بعض اسلامی ممالک میں اس ادارے کو ہلال احمر یعنی سرخ ہلال کہتے ہیں۔ اس کے جھنڈے پر صلیب کے جائے ہلال بنا ہوتا ہے۔ شروع میں اس تنظیم کو چلانے میں بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا لیکن آج یہ ایک بہترین فلاحی تنظیم کے طور پر جانی جاتی ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s